ایف آئی اے کی پانچ رکنی ٹیم کی شہباز شریف سے تفتیش

وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) کی 5 رکنی ٹیم نے مسلم لیگ نون کے صدر اور قومی اسمبلی میں قائدِ حزبِ اختلاف میاں شہباز شریف سے تفتیش کی ہے۔

ایف آئی اے کے ڈائریکٹر پنجاب زون 1 ڈاکٹر رضوان نے شہباز شریف سے تفتیش کرنے والی ٹیم کی سربراہی کی۔

ایف آئی اے نے شہباز شریف کو شوگر اسکینڈل میں تحقیقات کیلئے بلایا تھا، شہباز شریف تقریباً 1 گھنٹہ ایف آئی اے کے دفتر میں موجود رہے۔

ذرائع نے بتایا کہ آدھے گھنٹے کی تفتیش کے بعد شہباز شریف ایف آئی اے کے دفتر سے نکل گئے اور اپنی گاڑی میں بیٹھ گئے تو ایف آئی اے حکام نے انہیں دوبارہ بلا لیا۔

ذرائع نے بتایا کہ ایف آئی اے حکام نے شہباز شریف سے مزید آدھے گھنٹے تک تفتیش کی جس کے بعد انہیں جانے دیا۔

ایف آئی اے کی تفتیشی ٹیم نے اس دوران شہباز شریف سے مختلف سوالات کیئے۔

تفتیش کا عمل مکمل ہونے کے بعد میاں شہباز شریف ایف آئی اے کے دفتر سے واپس روانہ ہو گئے۔

اس سے قبل میاں شہباز شریف لاہور میں ایف آئی اے کے دفتر میں پیش ہوئے تو مسلم لیگ نون کے کارکنوں نے ایف آئی اے کے دفتر کے قریب لگے کیمپ پر نعرے لگا کر ان کا استقبال کیا۔

شہباز شریف کی آمد کے موقع پر کیمپ میں نون لیگ سے تعلق رکھنے والی خواتین کارکنوں کی جانب سے بھی اپنے قائد کے حق میں نعرے بلند کیئے گئے۔

واضح رہے کہ شوگر اسکینڈل میں ایف آئی اے لاہور نے میاں شہباز شریف کو آج طلب کر رکھا تھا۔

نوٹس میں شہباز شریف سے رمضان شوگر ملز میں چھوٹے ملازمین کے کھاتوں میں منتقل کیئے گئے 25 ارب روپے پر جواب مانگا گیا تھا۔

شہباز شریف نے گزشتہ روز سیشن کورٹ لاہور سے حفاظتی ضمانت کرائی تھی۔

ایف آئی اے نے شہباز شریف کے صاحبزادے، پنجاب اسمبلی میں قائدِ حزبِ اختلاف حمزہ شہباز کو 24 جون کو طلب کر رکھا ہے۔