مقبوضہ کشمیر میں جاری لاک ڈائون سے انسانی المیہ جنم لے رہا ہے،چوہدری یاسین

صدر پاکستان پیپلزپارٹی آزاد کشمیر وممبر آزاد جموں وکشمیر قانون ساز اسمبلی چوہدری محمد یٰسین نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں اس وقت انسانیت سسک رہی ہے ایک ہزار دن سے جاری لاک ڈائون سے انسانی المیہ جنم لے رہا ہے جعلی محاصروں اور سرچ آپریشن کے نام پر نہتے کشمیریوں کا قتل عام جاری ہے اور دنیا خاموش تماشائی ہے۔بھارتی فوج کے مظالم بڑھتے جا رہے ہیں چادر اور چار دیواری کا تصور ہی ختم ہو کر رہ گیا ہے مقبوضہ کشمیر کے عوام سے یکجہتی کے اظہار اور بھارتی مظالم کو بے نقاب کرنے کیلئے آل پارٹیز کانفرنس کے فیصلوں کی روشنی میں 24فروری کو نیشنل پریس کلب سے ڈی چوک تک ہونے والی ریلی میں پاکستان پیپلزپارٹی آزاد کشمیر کے کارکن بھرپور انداز میں شرکت کریں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے آزاد جموں وکشمیر قانون ساز اسمبلی کے اجلاس کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ سیاسی اختلافات اپنی جگہ لیکن مسئلہ کشمیر کے حوالہ سے کشمیری قیادت ایک صفحہ پر ہے اور بھرپور انداز میں مسئلہ کشمیر اجاگر کرنے اور انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں بھارتی فوج کے مظالم کو دنیا کے سامنے لایا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ اسلام آباد میں ہونے والی ریلی پہلا قدم ہے۔بھارت کے خلاف دنیا بھر میں مظاہرے کیے جائیں گے اور مقبوضہ کشمیر میں نہتے کشمیریوں پر ڈھائے جانے والے انسانیت سوز مظالم کو بے نقاب کریں گے۔انہوں نے کہا کہ وقت کا تقاضا ہے کہ بھارت کے مظالم کے خلاف جارہانہ مہم چلائی جائے تاکہ دنیا بھارت پر دبائو ڈالے اور اقوام متحدہ کی قراردادوں پر عمل کروایا جا سکے انہوں نے کہا کہ حق خودارادیت کیلئے اقوام عالم نے کشمیریوں سے وعدہ کر رکھا ہے اور سلامتی کونسل کی قراردادیں موجود ہیں انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ اپنا دوہرا معیار ترک کر کے اپنی قراردادوں پر عمل درآمد کروائے انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر حل نہ کروانے پر اقوام متحدہ کی کریڈ بیلٹی ختم ہو رہی ہے سوڈان،مشرقی تیمور پر اقوام متحدہ کا معیار اور ہے اور کشمیر و فلسطین پر اور ہے۔