نواز شریف کی جائیداد نیلامی کا حکم

احتساب عدالت نے توشہ خانہ ریفرنس میں اشتہاری ہونے پر مسلم لیگ ن کے قائد نوازشریف کی جائیداد نیلام کرنے کا حکم دے دیا، عدالت نے ڈپٹی کمشنر لاہور اور شیخو پورہ کو 60 روز کے اندر رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کردی۔

نیب راولپنڈی کی جانب سے نواز شریف کی جائیداد نیلامی کیلئے دائر درخواست احتساب عدالت نے منظور کر لی ہے، عدالت کے فیصلے کے مطابق نواز شریف کی جہاں جہاں جائیداد ہے، متعلقہ صوبائی حکومت اُسے نیلام کرسکے گی۔

عدالتی فیصلے میں ڈی سی لاہور اور ڈی سی شیخوپورہ کو نواز شریف کی اراضی فروخت کرنے کا حکم دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ 60 روز کے اندر رپورٹ پیش کریں، جائیدادیں نیلام کرکے رقم قومی خزانے میں جمع کرائی جائے۔

عدالت نے کہا کہ نوازشریف کی گاڑیاں پولیس کی مدد سے قبضے میں لے کر 30 دن کےاندر نیلام کی جائیں ، فیصلے میں ای ٹی او لاہور اور اسلام آباد کو نواز شریف کی 3 گاڑیاں اور 2 ٹریکٹر بھی فروخت کرنے کا حکم دیا گیا۔

نواز شریف کے 8 بینک اکاؤنٹس سے رقوم سرکاری خزانے میں منتقل کرنے کا بھی حکم دیا گیا، چیئرمین ایس ایس سی پی کو نواز شریف کے 4 کمپنیوں میں شیئرز فروخت کرنے کی ہدایت کی گئی ہے، شیئرز کی فروخت سے حاصل رقم بھی قومی خزانے میں جمع کرانے کی ہدایت کی گئی ہے۔

عدالت نے کہا ہے کہ جس جس جائیداد پر اعتراض نہیں آیا نیلام کی جا سکے گی، مری اور چھانگہ گلی کے گھر کی ضبطگی پر مریم نواز نے اعتراض کر رکھا ہے۔

واضح رہے کہ توشہ خانہ ریفرنس میں نوازشریف کی جائیداد نیلامی کے معاملے پر نیب پراسیکیوٹر سردار مظفر عباسی نے احتساب عدالت نمبر3 میں درخواست دائر کی تھی، 2 صفحات پر مشتمل درخواست میں جائیداد کی تفصیل بھی شامل تھی۔

نیب کی درخواست کے متن میں تحریر تھا کہ متعلقہ حکام کوضبط شدہ جائیدادیں نیلام کرنےکی ہدایت کی جائے، نیب کادرخواست میں موقف تھا کہ نوازشریف نےجان بوجھ کر سرنڈر نہیں کیا ہے۔

نیب کی تیار کردہ رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ ایس ای سی پی کے مطابق نواز شریف کے4 کمپنیوں میں شیئر ہیں، محمد بخش ٹیکسٹائل ملز میں نواز شریف کے 4 لاکھ 67 ہزار 950 شیئرز ہیں۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ حدیبیہ پیپر ملز میں نواز شریف 3 لاکھ 43 ہزار 425 شیئر کے مالک ہیں جبکہ حدیبیہ انجینئرنگ کمپنی میں نواز شریف کے شیئر کی تعداد 22 ہزار 213 ہے۔

اس کے علاوہ اتفاق ٹیکسٹائل ملز میں نواز شریف 48ہزار 606 شیئر کے مالک ہیں۔

نیب رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ نوازشریف کے مختلف نجی بینکس میں 3 غیر ملکی کرنسی سمیت 8 اکاؤنٹس شامل ہیں، 5 بینک اکاؤنٹس میں 6 لاکھ 12 ہزار روپے موجود ہیں، جبکہ غیر ملکی کرنسی والے اکاؤنٹس میں 566 یورو، 698 امریکی ڈالر اور 498 برطانوی پاؤنڈ ہیں۔

نیب نے بتایا کہ ایل ڈی اے ، لاہور،شیخو پورہ کے ایڈیشنل ڈپٹی کمشنرز اور مری کے اسسٹنٹ کمشنر اورگلیات ڈویلپمنٹ اتھارٹی نے رپورٹ دی ہے کہ نواز شریف اوران کے زیر کفالت افراد کے نام لاہور، شیخوپورہ، مری، ایبٹ آبادمیں جائیدادیں ہیں۔

مری میں بنگلہ، چھانگلہ گلی ایبٹ آباد میں 15 کنال کا مکان اور اپر مال لاہور پر جائیداد شامل ہے، نواز شریف اوران کے زیر کفالت افراد کے نام 1752 کنال سے زائد زرعی اراضی شامل ہے ۔

لاہور کے موضع مانک میں 936 کنال، موضع بڈوکسانی میں 299 کنال زرعی اراضی ، لاہور کے موضع مال رائے ونڈ میں 103کنال، موضع سلطان میں 312 کنال اراضی شامل ہے، اس کے علاوہ شیخوپورہ کے موضع منڈیالی میں 14 کنال،موضع فیروز وطن میں 88 کنال اراضی موجود ہے۔